پاکستان کی پہلی خاتون لیفٹنٹ جنرل ۔۔!! پاک فوج کی دبنگ خاتون افسر ’لیفٹنٹ جنرل نگار جوہر‘ کا تعلق کس مذہبی گھرانے سے ہے؟ جان کر آپ عش عش کر اُٹھیں گے

پاکستان کی پہلی خاتون لیفٹنٹ جنرل –!! پاک فوج کی دبنگ خاتون افسر ’لیفٹنٹ جنرل نگار جوہر‘ کا تعلق کس مذہبی گھرانے سے ہے؟ جان کر آپ عش عش کر اُٹھیں گے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )پاک فوج میں پہلی مرتبہ میجر جنرل سے لیفٹینٹ جنرل کے عہدے پر ترقی پانے والی ڈاکٹر نگار جوہر کے خاندان کےبارے میں اسلام آباد کے معروف اور سینئر ترین صحافی محسن رضا خان نےایسا حیران کن انکشاف کیا ہے کہ ہر کوئی حیران رہ جائے گا،پاک فوج کی پہلی خاتون لیفٹینٹ جنرل نگار جوہر کون ہیں اور ان کا کس معروف دینی گھرانے سے تعلق ہے؟تفصیلات سامنے آ گئی ہیں-

تفصیلات کےمطابق اسلام آبادمیں مقیم ملک کےمعروف اورسینئرصحافی محسن رضاخان نےسوشل میڈیاپرپوسٹ شیئر کرتے ہوئےانکشاف کیاہےکہ ہمارے دوست اور کلاس فیلو ڈاکٹر خالد سلطان چیئرمین ماس کیمو نیکیشن ڈیپارٹمنٹ ُنیشنل یونیورسٹی آف ماڈرن لینگویجز اسلام آباد کی اہلیہ کی ہمشیرہ کی صاحبزادی پاکستان کی پہلی خاتون لیفٹنٹ جنرل اور سرجن جنرل آج تعینات ہوئی ہیں-

لیفٹنٹ جنرل نگار جوہر برادر محترم اور آئی آیس آئی کےنامورسٹیشن ہیڈ میجر عامر اور مولانا محمد طیب طاہری کی بھانجی اور اس خطہ کے ممتاز عالم دین مولانا محمد طاہر پنج پیری کی نواسی ہیں، یہ اس خطہ پنج پیر صوابی خیبر پختونخوا اور پاکستان کا اعزاز ہے جس پر تمام لوگ مبارکباد کے مستحق ہیں-یاد رہے کہ پاک فوج کے تعلقات عامہ کے شعبے آئی ایس پی آر کے مطابق میجرجنرل نگارجوہرکو لیفٹیننٹ جنرل کے عہدے پرترقی دیدی گئی ہے ،نگارجوہر لیفٹیننٹ جنرل کے عہدے پرترقی پانےوالی پہلی خاتون افسر ہیں-لیفٹیننٹ جنرل نگارجوہرپاک آرمی کی پہلی خاتون سرجن جنرل ہیں ،لیفٹیننٹ جنرل نگارجوہرکاتعلق پنج پیرضلع صوابی سے ہے،لیفٹیننٹ جنرل نگارجوہراس وقت سی ایم ایچ راولپنڈی میں تعینات ہیں-
[Article Source: Hassan Nisar]