مسلم دنیا کا عظیم دماغ۔ سکول پڑھے مولوی اس بندے سے استفادہ لیں!

سکول پڑھے مولوی اس بندے سے استفادہ لیں۔
مسلم دنیا کا عظیم دماغ۔
اس جیسا کوئی مقرر نہیں کوئی مناظر نہیں۔ نہ ہی اس جیسا کوئی آرگیومنٹ کر سکتا ہے۔
آپکو اس بندے کو سمجھنے واسطے دماغ کی حقیقی معنوں میں ضرورت پڑے گی ۔
یہ ا ب پ ت یا a b c d سے چلنے والا کام نہیں۔
بعد از تمہید۔
حمزہ بھائی سابقہ اعیسائی تھے لیکن بعد ازیں شریعت محمدی ؐ میں آئے۔
بنیادی طور پر یونانی ہیں اور فلسفہ ، کلام ، سائیکالوجی، سوشیالوجی، انتھروپولوجی ، سائنس وغیرہ جیسے علوم قدیم و جدید کے ماہر ہیں ۔
قرآن اور سائنس و فلسفہ ، علم الحدیث ، علم الفقہ کے عالم بھی ہیں تاریخ اسلام سے بھی اچھی جانکاری رکھتے ہیں۔
میرے نزدیک ان سا ناطق اہل اسلام کے پاس اسوقت نہیں ہوگا ۔ انگریزی زبان کی وجہ سے اکثر ہمارا مزہبی طبقہ انکا لہجہ اور اسٹائل سمجھ نہیں پاتا ۔
اسلامک ریسرچ اسکالر اور لیکچرار ہیں لندن میں ۔
پاکستان میں آکر پرویز ہود بائی کو لوہے کے چنے چبوا چکے ہیں ۔
انکا مشغلہ بڑے اہتمام اور احترام کے ساتھ قوانٹم سائنس کی سٹوریز والے سائنسدانوں کی ٹھکائی کرنا ہے ۔
دیگر مزاہب والوں سے بھی مکالمہ کرتے ہیں دنیا کے کافی مشہور ملحدوں اور کیپٹلزم کے سکالرز کو زمین سے اکھاڑ چکے ہیں ۔
اتنا وسیع تر مطالعہ ہونے کے ساتھ بنیادی طور پر اعیسائی ہونے کے ساتھ سکول کی تعلیم کے ساتھ ۔
نہ تو حمزہ بھائی پاگل ہوئے اور نہ ہی کسی نفسیاتی بیماری کا شکار ہوئے۔قرآن و سنت کے ماننے والے ہی رہے۔
آجکل کچھ بیمار لوگ جنکے دماغ بیمار ہیں۔ یعنی یہ غامدی ، قرانسٹ، منکر احادیث وغیرہ اور انکے بڑے پیشواوں سے مطالعہ بھی کہیں زیادہ ہے اور انسے بڑے اسٹیجز سے لے کر پبلک پلیسز تک مکالمے بھی کر چکے ہیں ۔
مزے کی بات یہ ہے کہ انکو مشہوری کی خاطر نہ تو احادیث میں کیڑے نکالنے کی ضرورت پیش آئی اور نہ ہی مولوی کو جاہل کہنے کی ضرورت پیش آئی ۔